A Project of
SAHE-logo-high brown cqe-logo final

Humshehri: Thinking Pakistan's History

Thinking Pakistan's History

وادئ سندھ کی تہذیب (Indus Valley Civilization)

English Version

وادئ سندھ کی تہذیب وتمدن دنیا کی سب سے پہلی تہذیبوں میں سے ایک اور میسوپوٹامیااور قدیم مصر کی ہم عصر ہے۔

(Overview)عمومی جائزہ

وادی سندھ کی تہذیب 3300 سے1300 قبل مسیح کے درمیان نکھری۔ میسوپوٹامیا اور قدیم مصر کے ساتھ ساتھ یہ بھی سب سے پہلی تہذیبوں میں سے ایک اوردنیا کی سب سے بڑی قدیم تہذیب ہے۔ جو 1,260,000  مربع کلو میٹرکے رقبے پر پھیلی ہوئی تھی۔ جنوب میں ممبئی،بھارت اور شمال میں ہمالیا،افغانستان تک باقیات کی دریافت ہوئی ہے۔ اپنے عروج میں وادی سندھ کی تہذیب کی آبادی تقریباً 50 لاکھ لوگوں پر مشتمل تھی۔ اس تہذیب کے آثار بیسویں صدی کے اوائل میں دریافت ہونے تک پوشیدہ رہے۔

Indus Valley Civilization  Map Indus Valley Civilization map
(Huntington Archive)

(Cities)شہر

Ancient ruins at Harappa Ancient ruins at Harappa

اس تہذیب کے کھنڈرات انتہائی مہذب لوگوں کی داستان سناتے ہیں۔ وہ منظم شہری زندگی گزارتےتھے ۔ جنگلہ نما انداز میں بنائی گئی گلیوں ، نکاسی ِآب کا انتظام ، ایک سے زائد منزلہ گھروں اور گوداموں کے ساتھ شہروں کی اچھی منصوبہ بندی کی گئی تھی۔اہم شہروں کے منصوبوں اور تعمیر میں مماثلت، جیسا کہ گلیوں کی یکساں ترتیب اور اینٹوں کا معیاری سائز، ایک متحدہ سیاسی ڈھانچے کے امکان کی طرف اشارہ کرتی ہے۔

(Economy) معیشت

دریائےسندھ کے اردگرد کی زمین کی زرخیزی کی وجہ سے، کھیتی باڑی اور ڑیوڑ چرانا معیشت کا بنیادی سہارا تھے۔ موئن جودڑو اور ہڑپہ میں گوداموں کی موجودگی فصلوں کی زائد پیداوار کو ظاہر کرتی ہے۔ دریائے سندھ کے لوگوں نے سب سے پہلے کپڑا بنانے کے لیے کپاس کاشت کی۔ تجارت بھی معیشت کاایک حصہ تھی۔ وہ میسوپوٹامیا ، جنوبی بھارت، افغانستان اور ایران کے ساتھ تجارت کرتے تھے۔

(Pictographic writing) تصویری تحریر

Untitled-2 Indus Valley seal
(Kenoyer)

کچھ قدیم ترین تحریروں میں سے ایک، تصویری تحریر، 400 سے 600 مختلف علامات کے ساتھ سندھ کے مقامات سے دریافت کی گئی ہے۔یہ تحریریں زیادہ تر مہروں پر ظاہر ہوئی ہیں۔ بیل، ارنا بھینسے، گینڈے کے ساتھ ساتھ خیالی مخلوق ، جیسا کہ ایک سینگھ والا گھوڑا  (Unicorn) ، کی تراشی ہوئی تصویروں والی ہزاروں مہریں کھدائی کر کے نکالی گئی ہیں۔ ابھی تک علماء ان عبارتوں کو مکمل طور پر نہیں پڑھ سکےکیونکہ اس امکان کے علاوہ کہ یہ ایک قدیم دراوڑی زبان تھی ، یہ مکمل طور پر واضح نہیں ہے کہ سندھ کے لوگ کون سی زبان بولتے تھے۔

(Harappa & Mohenjo-daro) ہڑپہ اورموئن جودڑ و

Dancing Girl Dancing Girl
(Joe Ravi)
 

2600 سے1700 قبل مسیح کے درمیان ہڑپہ 40 ہزار کی آبادی کے ساتھ وادئ سندھ کی تہذیب وتمدن میں سب سے بڑے شہروں میں سے ایک تھا۔ آج بھی یہ پنجاب کے ضلع ساہیوال میں واقع ایک آباد شہر ہے۔جہاں مٹی کی اینٹوں سے بنی ہڑپہ قلعے کی دیواریں ابھی بھی دیکھی جا سکتی ہیں۔

سندھ کے علاقے لاڑکانہ میں واقع موئن جودڑوکسی زمانے میں وادی سندھ کی تہذیب کا اہم ترین شہر ہوا کرتا تھا۔ سندھی زبان کے اعتبار سے موئن جودڑو کا معنی '  مُردوں کا ٹیلہ ' بنتا ہے۔ شہر میں ایک  مرکزی بازار تھا جس کے  بیچ ایک مرکزی کنواں اور عوامی غسل خانہ تھا۔ جو ' عظیم غسل خانہ' کے نام سے جانا جاتا تھا۔

اسکے علاوہ موئن جو دڑو میں کانسی کا ایک مشہور مجسمہ بھی دریافت ہوا ہے جو  '  Dancing Girl 'کے نام سےجانا جاتا ہے۔

.

(Decline) زوال

1800 سے 1700  قبل مسیح کے درمیان وادئ سندھ کی تہذیب زوال پذیر ہونا شروع ہو گئی۔ سندھ کی اس تہذیب کے زوال کی وجوہات مکمل طورپر واضح نہیں ہیں۔ تاہم مؤرخین کا یہ ماننا ہے کہ یہ زوال،دریائے سندھ کے رُخ اور آب وہوا میں تبدیلی، لگاتار سیلاب اور شمال سے اِنڈو آرین قبائل کی جانب سے ہونے والے حملوں جیسے عوامل کے مجموعے کی وجہ سے ہو سکتا ہے۔

Find out more

Books & Articles

Dani, A. H., and B. K. Thapar. "The Indus Civilization." Ed. A. H. Dani and V. M. Masson. The History of Civilizations of Central Asia. Vol. 1. Paris: UNESCO, 1996.

Hussain, Jain. An Illustrated History of Pakistan (Book 1). Karachi: Oxford UP, 1981.

Koeller, David. "Harappan Civilization: Ca. 3000-1500 BC." The Web Chronology Project. Then Again, 2003.

Websites

Harappa.com: Older version and newer version of the website

PBS The Story of India: Indus Valley Civilization topic page with videos

Cobtribute
p5