A Project of
SAHE-logo-high brown cqe-logo final

Humshehri: Thinking Pakistan's History

Thinking Pakistan's History

شندور پولو فیسٹیول (Shandur Polo Festival)

English Version

شندور پولو فیسٹیول شندور پاس نامی سطح مرتفع پر منعقد ہوتا ہے۔ گلگت اور چترال سے حریف ٹیمیں پولو کے میدان پر ایک دوسرے کے خلاف مقابلہ کرتی ہیں۔

Last Updated: 19 Nov. 2013

(Origins of polo) پولو کا آغاز

Miniature of polo 1546 Miniature of polo 1546
(Wikimedia Commons)

یہ اندازا لگایا گیا ہے کہ پولو، گھڑ سواری کا قدیم ترین کھیل، 2000 سال سے بھی پہلے شروع ہوا۔ ایشیاء بھر میں مختلف ذرائع سے اس کے اندراج سامنے آئے ہیں اس طرح اس کے آغاز کے درست مقام کی نشاندہی کرنا مشکل ہو گیا ہے۔ تاہم، مؤرخین نے ایک رائے قائم کی ہے کہ پولو سب سے پہلے ایران میں یا وسطی ایشیاء کے ایرانی قبائل کے درمیان کھیلا گیا۔ درحقیقت، ایرانیوں اور ترکمانیوں کے درمیان کھیلے جانے والے ایک عوامی میچ کا قدیم ترین ریکارڈ 600 قبل مسیح کی تاریخ بتاتا ہے۔ بنیادی طور پر گھڑ سوار فوجی یونٹوں کی تربیت کے لیے استعمال ہونے والے پولو کا مقصد انہیں جنگ کے لیے تیار کرنا تھا۔

مشرق کی جانب سفر کرتےہوئے، پولو کو عربوں نے اپنا لیا اور اس کھیل نے بالآخر چین اور جاپان تک اپنا راستہ بنا لیا۔ درحقیقت، لفظ پولو کا ماخذ تبتی ہےاوریہ پُولُو سے نکلا ہے جس کا مطلب ہے گیند۔ برطانوی اپنے قبضے کے دوران اس کھیل کو برصغیر میں لے کر آئے اور اسے پوری دنیا میں پہنچا دیا۔

(Festival) تہوار

Shandur Polo Festival Stamp Shandur Polo Festival Stamp
(Pakistan Post Office)

شندور پولو فیسٹیول شندور پاس نامی سطح مرتفع پر جولائی کے مہینے میں منعقد ہوتا ہے، جو کہ 3,734 میٹر کی بلندی پرواقع ہے۔ یہ گلگت بلتستان کے ضلع غذر اور خیبر پختونخواہ کے ضلع چترال کے درمیان واقع ہے۔ اس پاس کی ملکیت خیبر پختونخواہ اور گلگت بلتستان کے مابین متنازعہ ہے کیونکہ دونوں ہی اسے اپنی ملکیت ہونے کا دعویٰ کرتے ہیں۔ پہلا باضابطہ طور پر ریکارڈ ہونے والا پولو کا کھیل یہاں 1936ء میں کھیلا گیا۔

گلگت اور چترال کی روایتی حریف ٹیمیں پولو میچ میں شرکت کرتی ہیں اور دونوں طرف سےصرف بہتریں کھلاڑی اور گھوڑے ہی مقابلہ کرتے ہیں۔ اتنی بلندی پر کھیلنے کے لیے کھلاڑیوں کا جسمانی طور پر مضبوط ہونا ضروری ہے اور ان میں آکسیجن کی کم مقدار کو برداشت کرنے کی صلاحیت ہونی چاہئے۔ عام طور پر دس منٹ کے درمیانی وقفے کے ساتھ ہر میچ ایک گھنٹے میں ختم ہوتا ہے۔ پولو میچ کے ساتھ ساتھ، تین روزہ تہوار میں لوک موسیقی اور رقص بھی شامل ہے۔ دیگر بیرونی سرگرمیاں جیسا کہ ماہی گیری، گھڑ سواری، چہل قدمی اور کوہ پیمائی کی سہولتیں بھی دستیاب ہوتی ہیں۔

Find out more

Books & Articles

"A Brief History of Polo." The Ancient Standard. 18 Sept. 2007.

"The Origins of Polo." Polo Museum.

"Shandur Polo Festival." Gilgit-Baltistan.

News

Hussain, Ali. "Gilgit-Baltistan to Participate in Shandur Festival." News Tribe. 8 June 2011.

Cobtribute
p5